بنیادی صفحہ » ایکسکلوسوز » گردن درد کی اصل وجہ کیا؟ علاج کیا؟

گردن درد کی اصل وجہ کیا؟ علاج کیا؟

گردن درد کی اصل وجہ کیا؟ علاج کیا

ڈاکٹر صاحب میں لیکچر کے دوران بلیک بورڈ پہ کچھ لکھنے کے بعد جونہی طلبا کو سمجھانے کی غرض سے مڑی تو اچانک میرے منہ سے زوردار چیخ نکلی،مجھے لگا جیسے میری گردن سے ایک درد کا کرنٹ نکلا اور کندھوں سے ہوتا ہوا میرے بازو تک چلا گیا۔

"مریضہ پچھلے دو سال سے گردن کے درد سے کافی پریشان تھیں اور میڈیکل ہسٹری سے پتہ چلا کہ وہ درد کی گولیاں کھا کر گزارہ کر رہی ہیں۔کچھ ڈاکٹروں نے آپریشن کا بھی مشورہ دیا لیکن پروفیسر صاحبہ آپریشن کے بعد کے مسائل سے آگاہ تھیں اور اپنی زندگی کو خطرے میں نہیں ڈالنا چاہتی تھیں۔

محترمہ بہت پڑھی لکھی اور تجربہ کار کیمسٹری کی پروفیسر تھیں اور پندرہ سالوں سے ایک بڑی یونیورسٹی کی ھیڈ آف ڈیپارٹمنٹ تھیں۔پروفیسر صاحبہ کی میڈیکل ہسٹری اور ٹیسٹ رپورٹس سے”Cervical Rediculopathy”مجھے معلوم ہوا کہ وہ نامی بیماری میں مبتلا ہیں۔یہاں پہ میں گردن کے درد کی کچھ بڑی وجوہات کا ذکر کرتا چلوں۔

1۔/Neck strainگردن کے پٹھوں کا کھچا
گردن کے درد کی 50 فیصد وجہ پٹھوں کا کھچائو ہے جو کہ دیر تک گردن کو ٹیڑھا رکھنے،سوتے وقت گردن کی پوزیشن کا خیال نہ کرنے یا کسی حادثہ سے ہوتا ہے۔اس درد سے بچا کے لیے گردن کی احتیاطی تدابیر کا استعمال کرنا بے حد مفید ہے۔

2۔Whiplash injury
اس بیماری میں گردن کے ساتھ جڑے پٹھے گردن کے اچانک آگے یا پیچھے کی طرف جھٹکا لگنے کی وجہ سے اندرونی چوٹ کا شکار ہو جاتے ہیں۔اس کی سرفہرست وجوہات میں کوئی ٹریفک حادثہ،کھیل میں یا لڑائی کے دوران گردن پر زور سے جھٹکا لگنا ہے۔

3۔Cervical spondylosis
اسے گردن کے جوڑوں کا آسٹیوآرتھراٹس بھی کہہ سکتے ہیں۔جو کہ گردن کے چھوٹے جوڑوں میں ہونے والی بڑھتی عمر کے ساتھ تنزلی تبدیلیوں کی وجہ سے ہوتا ہے۔اس میں سر کا درد اور گردن میں سے ہڈیوں کے ٹکرانے کی آواز کا آنا بھی شامل ہے۔ یہ بیماری اکثر 35 سال سے زیادہ عمر کے لوگوں میں ہوتی ہے۔اس کی وجوہات میں ایسے پیشہ سے منسلک ہونا جس میں گردن کا بہت زیادہ ہلانا ،گردن پر زیادہ بوجھ لادنا ،ڈپر یشن یا موروثی ہو سکتا ہے۔

4۔Cervical Rediculopathy
پروفیسر صاحبہ جن کا ذکر کالم کے شروع میں ہوا ہے ان کے گردن کے درد کی وجہ بھی یہی تھی۔اس میں گردن سے گزرنے والے اعصاب پر پریشر پڑتا ہے۔اس پریشر کی بڑی وجہ گردن کے مہروں کے درمیان پائی جانے والی ڈسکس کا ابھرنا یا پھٹ جانا ہے۔اس بیماری میں گردن، کندھے اور بازو میں بجلی کے کرنٹ جیسا درد کا احساس ہوتا ہے۔اس بیماری میں اکثر بازو سن ہو جاتا ہے اور بازو میں سوئیاں چبھنے کا احساس ہوتا ہے۔

وقت پہ علاج نہ کرانے کی صورت میں بازو کے پٹھوں کی کمزوری بھی ہو جاتی ہے۔
گردن کے درد سے بچنے کے لئے احتیاط بہت ضروری ہے۔احتیاطوں میں سر فہرست گردن کی پوزیشن کا خیال کرنا، گردن ٹیڑھی نہ رکھنا اور سوتے وقت صحیح تکیے کا استعمال کرنا ہیں۔روزانہ صرف پانچ منٹ کی گردن کی ورزش آپکو گردن کے درد کے بڑے مسئلے سے بچا سکتی ہے۔

ایک قابل فزیوتھراپسٹ آپ کو یہ ورزش بہت اچھی طرح گائیڈ کر دیگا۔گردن کے درد کی صورت میں درد کی تشخیص کے بعد علاج بہت ضروری ہے۔ ہمارے فزیوتھراپی کے علاج میں جدید مشینوں سے گردن کے درد کا علاج کیا جاتا ہے جسکا جسم میں گردوں، معدہ، جگر یا کسی اور حصے میں کوئی سائیڈ ایفیکٹ نہیں ہے۔یہ ایک مکمل اور دیر پا علاج ہے۔

x

Check Also

شمالی وزیرستان: دہشت گردوں کا فوجی چیک پوسٹ پر حملہ

شمالی وزیرستان: دہشت گردوں کا فوجی چیک پوسٹ پر حملہ

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کے مطابق دہشت گردوں نے پاک فوج کی غریوم چیک پوسٹ پر حملہ کیا۔