بنیادی صفحہ » ایکسکلوسوز » چند روز میں وزیر اطلاعات یا ایم ڈی پی ٹی وی کی چھٹی

چند روز میں وزیر اطلاعات یا ایم ڈی پی ٹی وی کی چھٹی


اسلام آباد ( صدائے سچ خصوصی رپورٹ) انتہائی معتبر ذرائع نے دعوی کیاہے کہ وفاقی وزیر اطلاعات چوہدری فواد اور منیجنگ ڈائر یکٹر پی ٹی وی ارشد خان نے کے مابین جاری تنازعہ پوائنٹ آف نوریٹرن پر پہنچنے کے نتیجے میں آئندہ چند روز میں چوہدری فواد کی وزارت اطلاعات سے یا ارشد خان کی منیجنگ ڈائر یکٹر پی ٹی وی کے عہدے سے چھٹی ہوسکتی ہے ۔ ذرائع کے مطابق وزیر اطلاعات چوہدری فوادحسین اور منیجنگ ڈائریکٹر پی ٹی وی ارشدخان میں کئی قدریں مشترک ہیں لیکن اس کے باوجود اختلافات اتنے شدید ہوچکے ہیں کہ ایک دوسرے کانام بھی سننا پسند نہیں کرتے۔دونوں کاتعلق ضلع جہلم سے ہے، دونوں نے مشرف، ق لیگ اور پی پی پی کیساتھ کام کیا ہے اور دونوںکا وزیراعظم سے ڈائریکٹ تعلق ہے۔اتفاقا دونوں کو مل کے اکٹھے کام کرنے کا موقع ملا ہے، لیکن علاقائی تعلق بھی دونوں کی دوری کو دورنہیں کرسکا۔ وفاقی وزیر اطلاعات چوہدری فواد اور وزارت اطلاعات کو شکایت ہے کہ ارشد خان پی ٹی وی کے کسی معاملے پر بھی وزیر اطلاعات یا وزارت اطلاعات کواعتماد میں نہیں لیتے اور نہ ہی کسی معاملے میں انکی گائیڈ لا ئنز کو اہمیت دینا گوارہ کرتے ہیں۔حالانکہ وہ رولز آف بزنس کے تحت وزیر اطلاعات اور وزارت اطلاعات و نشریات کوجواب دہ ہیں ۔ لیکن وزیراعظم سے تعلق ہونے کے باعث انہوں نے پی ٹی وی کے ہر ایشو پر وزیراطلاعات ، سیکرٹری اطلاعات کو بائی پاس کیاہے۔وزیراطلاعات اور وزارت اطلاعات سے زیادہ وزیراعظم سیکرٹریٹ میں بیٹھے وزیراعظم کے میڈیا مشیروں، یوسف بیگ مرزا، افتخار درانی کو زیادہ اہمیت دیتے ہیں ۔ارشدخان بطور منیجنگ ڈائریکٹر پی ٹی وی ، ڈائر یکٹر جنرل پوسٹ آفس اور پریذیڈ نٹ یو فون خدمات کامیابی سے انجام دے چکے ہیں ۔ انہیں وزیر اعظم نے پی ٹی وی کو خسارے سے نکال کر جد ید خطور پر استوارکرنے کے لیے تمام تر مخالفت کے باوجود منیجنگ ڈائر یکٹر پی ٹی وی بنوایا ہے ۔حالانکہ انکی عمر 65سال کے لگ بھگ ہے جبکہ سپریم کورٹ کے ایم ڈی کی تعیناتی کے حوالے سے احکامات ریکارڈ پر ہیں سابق سیکرٹری اطلاعات احمد نواز سکھیر کو انکی بطور ایم ڈی تعیناتی مخالفت پر وزارت اطلاعات سے جانا پڑا ۔ارشد خان کووزیر اعظم عمران خان کا اتنا اعتماد حاصل ہے کہ وزیراعظم نے براہ راست سابق سیکرٹری اطلاعات و نشریات احمد نواز سکھیر کو ٹیلی فون پر حکم
دیا کہ ارشد خان کی ایم ڈی اور چیئرمین پی ٹی وی دونوں عہد وں پر تعیناتی کے لیے سمری بھیجیں کیونکہ دونوں کے بغیر وہ پی ٹی وی کے حوالے سے کارکردگی نہیں دے سکتے۔جس پر سابق سیکرٹری نے کہا کہ انکی عمر سپر یم کورٹ کے فیصلے سے مطابقت نہیں رکھتی اور اس صورت میں تو ہین عدالت کا کیس کھل سکتا ہے، پہلے ہی احمد ندیم قاسمی کی عمر کی مقرر حد سے زیادہ ہونے کی وجہ سے سپریم کورٹ میں انہیں کئی پیشیاں بھگتا پڑی ہیں حالانکہ انکی تعیناتی براہ راست سابق وزیراعظم میاں نوازشریف نے کی تھی۔اسکے باوجود وزارت اطلاعات کو سپریم کورٹ میں جوابدہ ہونا پڑا۔کسی صورت قانونی طور پر انہیں مستقبل ایم ڈی تعینات نہیں کیا جاسکتا ۔ جس پر وزیراعظم عمران خان نے انہیں کہا کہ ارشد خان نے مجھے رولز بتا ئے ہیں آپ ان سے رہنمائی لے لیںاور وہ جس طرح کہتے ہیں اس طرح کرلیں۔ جس پر احمد نواز سکھیر ا نے کہا کہ ایسے کو ئی رولزموجود نہیں ہیں کہ انھیں مستقل ایم ڈی بنایا جاسکے۔اس ٹیلی فون کے دوتین دن بعد احمد نوازسکھیرا کو وزارت اطلاعات سے ہٹا کر او ایس ڈی بنادیا گیا ۔بعدازاں ارشد خان کوایکٹنگ منیجنگ ڈائریکٹر بنادیاگیا۔ انکی تعیناتی کے کچھ دن بعد ہی کئی تنازعات کھل گئے اور صورتحال یہاں تک جاپہنچی کہ اس وقت پی ٹی وی ملازمین گذشتہ کئی دنوں سے تنخواہوں ، ہائوس رینٹ میں اضافہ نہ ملنے اور میڈ یکل الائونس کی بندش کے خلاف احتجاج پر ہیں اور انہوںنے ایم ڈی کادفتر میں داخلہ بند کررکھا ہے ہڑتالی ملازمین کا کہنا ہے گذشتہ دس سال سے پی ٹی وی میں کنٹر یکٹ پر کام کرنے والے ملازمین کو ارشد خان فارغ کرکے پی ٹی وی کو منافع میں دکھا نا چاہتا ہے جبکہ دوسری طرف سپریم کورٹ کے کے فیصلے کی سرعام خلاف ورزی کرتے ہوئے خاور اظہر کو ساڑھے بارہ لاکھ پر ہیڈ آف کنٹینٹ لگانے کے ساتھ کئی افراد کو بھاری تنخواہوں پر بھرتی کیا ہے ذرائع وزارت اطلاعات کی طرف سے ارشد خان کو جلد چارج شیٹ جاری کیے جانے کا امکان ہے ، وزیراطلاعات ، چوہدری فواد ایم ڈی پی ٹی وی سے شدید نالاں ہیں ، صورتحال یہا ں تک آ پہنچی ہے کہ گذشتہ روز وہ ملازمین
کے ہڑتالی کیمپ پہنچ گئے اور ارشد خان کیخلاف غیر سیاسی افراد کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا ہے ذرائع کیمطابق کچھ لوگوں نے وزیر اطلاعات اورایم ڈ یپی ٹی وی میں مصالت کی کوشش کی ہے لیکن فریقین کی ہٹ دھرمی کے باعث ناکام ہوئی ہے ۔ موجودہ صورتحال میں وزیراعظم پاکستان کو ضلع جہلم سے تعلق رکھنے والے چوہدری فواد اور ارشد خان میں سے ایک جہلمی کی قربانی دینا پڑے گی ۔ اور دوسرے کو کسی دوسری جگہ اکام مو ڈیٹ کیاجائے گا ۔ اس حوالے سے جلد فیصلہ ہونے کا امکان ہے اس حوالے سے مو قف جاننے کے لیے منیجنگ ڈائر یکٹر ارشد خان سے جب روزنامہ صدائے سچ کی طرف سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے کہ میں موجودہ صورتحال پر کوئی تبصر ہ نہیں کر سکتا ۔ یہی میرا موقف ہے ۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*

x

Check Also

شمالی وزیرستان: دہشت گردوں کا فوجی چیک پوسٹ پر حملہ

شمالی وزیرستان: دہشت گردوں کا فوجی چیک پوسٹ پر حملہ

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کے مطابق دہشت گردوں نے پاک فوج کی غریوم چیک پوسٹ پر حملہ کیا۔